ماہ  شعبان عظمتوں کا مہینہ ہےکیونکہ اس میں عظیم ہستیوں کی ولادتیں ہیں، پہلے   امام  حسین (علیہ السلام)  کی ولادت پھر   حضرت  عباس (علیہ السلام) اور آج  چوتھے   امام  حضرت  زین  العابدین (علیہ السلام) کی ولادت کا دن ہے۔

پانچ شعبان سن ۳۸ ہجری   مدینہ منورہ میں خاندان   وحی اور   امامت میں ایک نیا بھول کھلا کہ جس کے نور سے دنیا منور ہو گئی۔

امام حسین (علیہ السلام) کو اپنے بابا   علی  مرتضی (علیہ السلام)  سے اتنی الفت تھی کہ آپ نے اپنےسب  بیٹوں کا نام   علی رکھا۔

امام سجاد (علیہ السلام)    کربلا کے واقعہ کے بعد ۲۲ سال کی عمر میں منصب امامت پر فائز ہوئے اور اسطرح   امت کی ہدایت کا عہدہ سمبھالا۔

امام   علی  بن  الحسین (علیہ السلام) کے لئے کثرت سے   القاب نقل ہوئے ہیں جو اس بات کی دلیل ہیں کہ آپ بے انتہا کمالات اور خوبیوں کے مالک تھے،آپ کے کچھ مشہور القاب ہیں:

۱-  سید  الساجدین : یعنی سجدے کرنے والوں کے سردار۔

۲- سجّاد : کثرت سے سجدہ کرنے والا۔

۳-  زین  العابدین :اسکا مطلب ہے عبادت کرنے والوں کی زینت۔

۴-   ذو  الثفنات : یہ لقب امام کو اس لئے ملا کیونکہ کثرت سے طولانی سجدے کرنے کے نتیجہ میں آپکی پیشانی پر اثر نمایاں ہو جاتا تھا اور بہت زیادہ گٹے پڑجاتے تھے۔

۵-   ابن  الخیرتین : آپ کو اس لئے اس لقب سے یاد کیا جاتا ہے کیوں کہ آپ کے والد بنی ہاشم کے بہترین فرد تھے اور آپ کی والدہ  یعنی بی بی   شہربانو (علیہا السلام)غیر عرب میں بہترین خاتون تھیں۔

امام سجاد (علیہ السلام) نے بہت زیادہ حساس اور خطرناک حالات میں امت کی راہنمائی کی اور اپنی درایت سے تبلیغ اسلام کا بہترین نمومہ دعاوں کی صورت میں پیش کیا۔ بنی امیہ کی ظالمانہ حکومت میں اسلامی معارف کو   دعاؤں کے مجموعہ کے ذریعہ مسلمانوں تک پہنچایا  جوکہ آج بھی   صحیفہ  سجادیہ انسانوں کے لئے مشعل راہ ہے۔

امام صادق (علیہ السلام) آنلائن مدرسہ تمام مسلمانوں کی خدمت میں سید الساجدین، زین العابدین امام علی بن الحسین (علیہ السلام) کی ولادت کی مناسبت سے مبارک باد پیش کرتا ہے۔